چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کا کہنا تھا کہ پرویز مشرف کا کیس اوپن اینڈ شٹ کیس تھا۔ کئی مواقع پہ لالچ دیا گیا، اہم عہدوں کی پیشکش ہوئی، دانا ڈالا جاتا ہے، میں نے دانا نہیں چگا، عدل کریں تو کسی بات کا کوئی خوف نہیں ہوتا۔

عرفان قادر نے 100 مرتبہ پروگراموں میں کہا کہ میں نے نواز شریف کو گاڈفادر لکھا، میں نے پاناما کیس کے فیصلے میں گاڈفادر نہیں لکھا، پھر سسیلین مافیا کی بات بھی مجھ سے منسوب کر دی گئی۔

آصف سعید کھوسہ نے مزید کہا کہ ممتاز قادری کیس کے فیصلہ پر سابق آرمی چیف جنرل راحیل نے پیغام بھیجا کہ آپکو سیکورٹی دینگے، ایک دن سوچا پھر جواب دیا اگر ایک دفعہ سیکورٹی کی گود میں بیٹھ گئے تو نکل نہیں سکیں گے۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کیس پر تبصرے کرتے ہوئے چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ہمارا خیال تھا کہ یہ ریفرنس فیض آباد دھرنے کے فیصلے پر آیا ہے لیکن بعد میں یہ لندن جائیدادوں کا نکلا۔۔ میں نے فائز عیسیٰ کوفیض آباد دھرنے سے متعلق محتاط ریمارکس دینے کا مشورہ دی

آرمی چیف ایکسٹنشن کیس پر تبصرہ کرتے ہوئے چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ آرمی چیف کی توسیع کے فیصلے کے دوررس اثرات ہونگے جو آپکو بعد میں پتا لگیں گے

چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کا کہنا تھا کہ ریٹائرمنٹ کے بعد کیمبرج، ہارورڈ میں فیلو شپس کی آفر ہوئی جو میں نے قبول کرلی ہے۔