پکتیا قتل عام پر پی ٹی ایم کا شرمناک طرز عمل

پکتیا قتل عام پر دو دن تک ردعمل نہ دینے کا پی ٹی ایم پاگلوں کی طرح کوئی جواز ڈھونڈ رہی ہے مطلب “پرتوگ ورلہ لٹوی ” ۔۔۔۔

ان کے گروپس میں جو الل ٹپ قسم کے مشورے دئیے جا رہے ہیں ان میں سے چند ایک یہ ہیں۔

پہلا یہ کہ منظور پسکین کی طرح شہید ہونے والوں کو افغانی ثابت کرے۔ جیسا کہ کل اس نے اپنی پوسٹ میں ثابت کرنے کی کوشش کی۔

دوسرا یہ کہ ان کو دہشت گرد ثابت کرے جیسا کہ افغان فورسز کا موقف ہے۔

تیسرا موقف سب سے زوردار ہے اور پی ٹی ایم کے فیس بک گروپس میں شیر بھی کیا جا رہا ہے کہ ۔۔۔

” کہ پاک فوج نے افغان اور امریکی فوجیوں کی وردی پہن کر یہ سب کیا ہے تاکہ امریکی اور افغان فورسز کو بدنام کیا جا سکے” ۔۔۔ 😕

پی ٹی ایم والوں نے اپنی ماں کا دودھ پیا ہے تو اسی پر ڈٹ جائیں۔

اور اس میں یہ اضافہ بھی کر لیں کہ ہوسکتا ہے کہ اس واقعے کے سینکڑوں چشم دید گواہوں کو آئی ایس آئی نے خرید لیا ہو؟

ارے منافقو
جن افغانیوں نے اس آپریشن کو کمانڈ کیا تھا ان کے نام تک سامنے آنے لگے ہیں۔

پی ٹی ایم سے لوگ سوال کرنے لگے ہیں کہ ارمان لونی کے جسم پر داغ تک نہیں ملا اور آپ نے پورا پاکستان سر پر اٹھا رکھا ہے۔
یہاں آپ کے آٹھ لوگوں کو بہمانہ انداز میں قتل کر دیا گیا ہے اور آپ دو دن تک اس پر خاموش رہے اور ” عورت آزادی مارچ ” کی شکل میں رنگ رلیاں مناتے رہے۔۔۔

محض اس لیے کہ قاتل افغان فورسز ہیں؟

دو دن بعد جاکر کہیں منظور پشتین نے اس پر جو رسمی سی احتجاجی اؤاز نکالی ہے وہ کسی حاملہ بکری کی طرح مہین اور کمزور تھی۔

کیوں؟؟

وہ گھن گھرج؟
وہ فوج کو قتل کرنے کی دھمکیاں کہاں گئیں؟
افغانستان میں پی ٹی ایم کوئی احتجاجی ریلی نکالی گی؟ کیونکہ لر و بر یو افغان کا حق یہی ہے کہ ایسا کیا جائے!

نام لے کر اس افغان کمانڈر کی سزا کا مطالبہ کرے گی جس نے یہ قتل عام کروایا تھا؟؟