چین نے کورونا وائرس کی ویکسین تیار کرلی، پاکستان میں ہیومن ٹرائل کا فیصلہ کر لیا گیا۔ رپورٹ کے مطابق پوری دنیا کو لاک ڈاؤن کرنیوالے انسانیت کے خطرناک دشمن کوویڈ 19 کا علاج چین نے دریافت کر لیا۔

چینی میڈ یکل و ہیلتھ کیئر گروپ سینو فارم انٹرنیشنل کارپوریشن کے جی ایم لی کان کی طرف سے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ پاکستان کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر عامر اکرام کو لکھے گئے خط میں کہا گیا ہے کہ کورونا وائرس کو کنٹرول کرنے کے لیے جلد ویکسین تیار کرنا ضروری ہے، دنیا بھر میں ادویات ساز کمپنیاں کورونا وائرس کی ویکسین تیار کرنے کے لیے ہنگامی بنیادوں پر کام کر رہی ہے، ہمیں یقین ہے کہ پاکستان بھی اسی طرح کا رویہ اختیار کرے گا، امید ہے کورونا کی ویکسین کے کامیاب کلینیکل ٹرائل کے باعث پاکستان دنیا کے ان ابتدائی ممالک میں شامل ہو جائے گا جہاں ویکسین کا استعمال شروع ہو سکے گا۔

خط میں مزید لکھا گیا، سینو فارم کا خیال ہے کہ نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ پاکستان پارٹنر کی مدد سے کورونا وائرس کی ویکسین کے کلینیکل ٹرائل کی اہلیت رکھتا ہے لیکن اس مقصد کو حاصل کرنے کے لیے سینو فارم اور نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ پاکستان کے درمیان ہنگامی بنیادوں پر معاہدے کی ضرورت ہے۔ ایگزیکٹو ڈائریکٹر نیشنل انسٹیٹیوٹ آف ہیلتھ ڈاکٹر عامر اکرام نے بھی کورونا ویکسین کی تیاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ چین میں تیار کی جانے والی یہ ویکسین کلینیکل ٹرائل کے لیے فوری طور پر پاکستان کو بھی فراہم کی جائے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس ویکسین کو تین سے چار ماہ کے عرصے میں کلینیکل ٹرائل کے بعد لانچ کیا جائے گا۔ یاد رہے پاکستان میں ٹرائل کے لیے محض ضابطے کی کارروائی ہونا باقی ہے۔