پلوامہ حملےکی چین نے مذمت کی، لیکن مسعود اظہرپرپابندی عائد کرنےکا مطالبہ کردیا مسترد
چین نے ایک بیان جاری کرکے کہا ہے کہ اس حادثہ سے وہ حیران رہ گیا ہے اوردہشت گردی کی سخت مذمت کرتا ہے۔

چین نے پلوامہ میں ہوئے دہشت گردانہ حملے کی مذمت کی ہے۔ چین نے ایک بیان جاری کر کےکہا ہےکہ اس حادثہ سے وہ حیران رہ گیا ہے اوردہشت گردی کی سخت مذمت کرتا ہے۔ حالانکہ چین نےایک بارپھرمسعود اظہرپرپابندی لگانے کے لئے اقوام متحدہ سے اپیل کی تھی، لیکن چین ایک بارپھراس کے خلاف ہے۔ چین نے مسعود اظہرپرپابندی عائد کرنے کی اپیل مسترد کردی ہے۔ پلوامہ دہشت گردانہ حملے کے بعد بھی چین مسعود اظہراورپاکستان کے ساتھ کھڑا ہے۔

وہیں ہندوستان میں روس کے سفیرنے پلوامہ حملے پرافسوس کا اظہارکیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی روس کے صدرولادی میرپتن نے کہا کہ ان کے احساسات ہندوستان کے ساتھ ہیں، ہم اس گھناونے جرم کی سخت مذمت کرتے ہیں، اس حملے کے مجرموں اورانجام دینے والوں کو بے شک سزا دی جانی چاہئے۔

واضح رہے کہ جمعرات کو دوپہر3:20 بجے آئی ای ڈی دھماکہ سے سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آرپی ایف) کے قافلے کی ایک بس کو نشانہ بنایا گیا۔ اس حملے میں 38 سی آرپی ایف جوان شہید ہوگئے۔ پلوامہ کے اونتی پورا کے گوری پوراعلاقے میں سی آرپی ایف کے قافلے پردہشت گردوں نے آئی ای ڈی سے حملہ کیا تھا۔

اس حملےکے بعد وزیراعظم نریندرمودی نے کہا کہ پلوامہ جیسے حملوں کا پورا ملک ڈٹ کر مقابلہ کرے گا۔ میں سبھی شہید جوانوں کی آتما کو خراج پیش کرتے ہوئے ملک کو یہ یقین دلاتا ہوں کہ ان کے خوابوں کوپورا کرنے کے لئے ہم اپنی زندگی کا لمحہ لمحہ صرف کردیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ‘ہمارے سیکورٹی اہلکاروں کومکمل آزادی دے دی گئی ہے، میں دہشت گرد تنظیموں اوران کے سرپرستوں کو کہنا چاہتا ہوں کہ وہ بہت بڑی غلطی کرچکے ہیں، اس حملے کے جوگنہگارہیں، انہیں اس کی سزا ضرورملے گی’

http://urdu.news18.com/news/china-condemned-the-pulwama-terror-attack-in-jammu-and-kashmir-ns-263084.html