پنجاب کے وزیرقانون راجہ بشارت کی ایک ٹیلیفون کال کی ریکارڈنگ سامنے آئی ہے جس میں وہ پنڈی کے بینظیر بھٹو ہاسپٹل کے ایم ایس سے کہہ رہا ہے کہ حنیف عباسی کی بیٹی ڈاکٹر اریبہ عباسی اس کی بیٹیوں جیسی ہے، اس لئے ایم ایس ڈاکٹر اریبہ کا ٹرانسفر ایمرجینسی کی بجائے اس کی مرضی کے سکن ڈیپارٹمنٹ میں کردے۔

ایم ایس نے وزیرقانون کی بات ماننے سے انکار کردیا اور کہا کہ ڈاکٹر اریبہ کو ایمرجینسی وارڈ میں ہی کام کرنا پڑے گا۔ جس پر وزیرقانون راجہ بشارت نے دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ پھر وہ ایم ایس اپنے تبادلے کیلئے تیار رہے۔ جواب میں ایم ایس طارق نیازی نے کہا کہ چاہے جو مرضی ہوجائے، وہ وزیرقانون کا دباؤ قبول نہیں کرے گا۔

بعد ازاں طارق نیازی نے بتایا کہ اس سے قبل راجہ بشارت کا بھائی بھی ڈاکٹر اریبہ کی سفارش کرتے ہوئے دو مرتبہ دھمکی آمیز کالز کرچکا ہے۔

کہنے کو تو حنیف عباسی وہی ن لیگی ہے جس نے عمران خان کے خلاف بنی گالہ اور لندن فلیٹ کے حوالے سے نااہلی کا ریفرینس دائر کیا تھا۔ لیکن اپنے پنڈی وال بھائی کی بیٹی کی مدد کیلئے راجہ بشارت سیاسی اختلافات بھلاتے ہوئے ہاسپٹل کے ایم ایس کو دھمکیاں دینا شروع ہوگیا، جس سے ثابت ہوتا ہے کہ عمران خان اور چند ایک دوسرے رہنماؤں کو چھوڑ کر باقی سب کے سب اندر سے ملے ہوئے ہیں۔

اپنی نوعیت کے اعتبار سے یہ ایک سنگین ترین واقعہ ہے کیونکہ دھمکی دینے والا کوئی معمولی شخص نہیں بلکہ سب سے بڑے صوبے کا وزیرقانون ہے۔ اگر وزیرقانون کی اپنی غیرقانونیت کا یہ عالم ہے تو پھر دوسروں کے متعلق سوچتے ہوئے میرے پسینے چھوٹ جاتے ہیں۔

یہ کس قسم کی بے غیرتی ہے؟ ایسے شخص کو نہ صرف وزارت سے برطرف ہونا چاہیئے بلکہ تحریک انصاف کو خود اس کی نااہلی کیلئے الیکشن کمیشن اور سپریم کورٹ سے رجوع کرنا چاہیئے۔

ان حرامزادوں نے پاکستان کو اپنی خاندانی جاگیر سمجھ رکھا ہے اور ہر کوئی مل جل کر پاکستان کو نوچ کھسوٹ رہا ہے۔

اس سے قبل سابق وفاقی وزیر اعظم سواتی بھی ایسی ہی حرکت کرچکا ہے، اور اب پنجاب کا وزیرقانون بھی کھلے عام دھمکیاں دیتا پھر رہا ہے۔

اگر یہی بے غیرتیاں کرنی تھیں تو پھر اتنا سیاپا کرنے کی کیا ضرورت تھی؟ ہمیں ایسے وزیر، مشیر اور حکمران نہیں چاہئیں جو دھکمیاں دے کر تبادلے اور تقرریاں کروائیں۔ اس ناسور کا جتنی جلد ہوسکے قلع قمع کرنا ہوگا ورنہ تحریک انصاف کی موجودہ حکومت اور سابقہ حکومتوں میں کوئی فرق نہیں رہے گا۔

راجہ بشارت کی معطلی تک تحریک انصاف کی پنجاب حکومت سے میری کھلی جنگ رہے گی، اور جاننے والے جانتے ہیں کہ اللہ کی مہربانی سے اس پیج پر جب بھی کسی کے خلاف مہم برپا ہوئی، وہ اپنے انجام تک ضرور پہنچی!!! بقلم خود باباکوڈا