—فوٹو: ڈان نیوز
—فوٹو: ڈان نیوز

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما نعیم الحق کی نماز جنازہ کراچی میں ادا کردی گئی۔

نعیم الحق کی نماز جنازہ کراچی کے علاقے ڈیفنس ہاؤسنگ اتھارٹی کے خیابان اتحاد پر قائم مسجد عائشہ میں نمازِ عصر کے بعد ادا کی گئی۔

پی ٹی آئی کے مرحوم رہنما کی نماز جنازہ میں وزیر داخلہ اعجاز شاہ، گورنر پنجاب چوہدری سرور، وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سمیت متعدد وفاقی و صوبائی وزرا نے شرکت کی۔

اس سے قبل وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان سمیت پی ٹی آئی کے دیگر رہنما متوفی نعیم الحق کی رہائش گاہ پہنچے تھے۔

اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فردوس عاشق اعوان نے نعیم الحق کو خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ ‘فرنٹ لائن پر موجود ایک سپاہی کی طرح نعیم الحق نے وزیر اعظم عمران خان کے بیانیے کا ہر موڑ پر دفاع کیا اور ان کے نظریے کو حقیقت میں تبدیل کرنے کے لیے انتھک محنت کی’۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘ہم ان کے عزم کی تکمیل جاری رکھیں گے’۔

واضح رہے کہ تحریک انصاف کے بانی رکن اور وزیر اعظم عمران خان کے قریبی ساتھی نعیم الحق گزشتہ روز 70 سال کی عمر میں کراچی میں انتقال کرگئے تھے، وہ طویل عرصے سے کینسر کے مرض کا شکار تھے۔

ان کے سوگواران میں ایک بیٹا اور بیٹی شامل ہیں۔

2 سال قبل نعیم الحق میں کینسر کی تشخیص ہوئی تھی تاہم گزشتہ چند مہینوں میں ان کی صحت مزید خراب ہوئی تھی جس کے بعد انہیں کراچی کے ایک ہسپتال منتقل کردیا گیا تھا۔

تحریک انصاف کراچی چیپٹر نے نعیم الحق کی وفات پر 3 روزہ سوگ کا اعلان کیا۔تحریر جاری ہے‎

خیال رہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے رواں ماہ کے اوائل میں کراچی کے دورے کے دوران نعیم الحق کی عیادت بھی کی تھی۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر بیان جاری کرتے ہوئے نعیم الحق کے انتقال پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ‘ایک دیرینہ دوست کے انتقال پر غمزدہ ہوں’۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘نعیم الحق، تحریک انصاف کے 10 بانی اراکین میں سے تھے اور 23 سال کی جدوجہد میں میرے ساتھ کھڑے رہے، کامیابی ہو یا ناکامی نعیم الحق پارٹی سے ہمیشہ مخلص اور وفادار رہے’۔

واضح رہے کہ نعیم الحق تحریک انصاف کے بانی ارکان میں شامل تھے، وہ پارٹی کے مرکزی سیکریٹری اطلاعات کی ذمہ داریاں بھی انجام دے چکے تھے۔

نعیم الحق، وزیر اعظم عمران خان کے قریبی ساتھیوں میں شمار کیے جاتے تھے۔