ہوسکتا ہے آپ ایسے 80 یا 90 سالہ افراد کو جانتے ہوں جو جسمانی طور پر مستعد اور ہر کام کرتے ہوں اور ایسے بھی 40 یا 50 سال کے لوگ آپ نے دیکھے ہوں گے جن سے ہلا بھی نہیں جاتا۔

درحقیقت آپ کی چند عادتیں ایسی ہوتی ہیں جو جسم کو تیزی سے بڑھاپے کی جانب گامزن کردیتی ہیں,تاہم ان عادتوں سے واقف ہوکر انہیں ترک کرنا اور قبل از وقت بڑھاپے سے بچنا کافی آسان ہے۔

پیٹ کے بل سونا

پیٹ کے بل سونا- فوٹو

طبی ماہرین کے مطابق جب کوئی پشت کے بل سونے کا عادی ہو اور چہرے تکیے میں دب جاتا ہے تو اس کا فوری اثر سامنے آتا ہے، جیسے آنکھوں کی سوجن اور پھول جانا، جس کی وجہ چہرے کا سیال سامنے طرف آجانا ہے۔ وقت گزرنے کے ساتھ اس عادت کے نتیجے میں چہرے شکنوں سے بھر جاتا ہے جبکہ کولیگن نامی جلد کی لچک برقرار رکھنے والا ہارموں ختم ہوجاتا ہے۔ اگر تو آپ جلد بڑھاپے کے شکار نہیں ہونا چاہتے تو کبھی بھی اس انداز سے نہ سوئیں۔

چہرے کو نہ دھونا

چہرہ دھونا-فوٹو

خواتین میں یہ کافی عام ہے کہ اکثر کاموں کی مصروفیات کی بناءپر سونے سے قبل میک اتارنا بھول جاتی ہیں، مگر ایسا کبھی نہ کرنا ہی بہتر ہوتا ہے۔ سونے سے قبل چہرے کو دھونا دھول مٹی، پسینے اور میک اپ کی صفائی کے لےی ضروری ہے، اگر مرد دن بھر کے کاموں کے بعد آنے والے پسینے یا خواتین میک اپ کو صاف نہ کریں تو مسام بند ہونے لگتے ہیں جس کے نتیجے میں کیل مہاسے ابھرنے لگتے ہیں۔ اگر جلد چکی ہو تو چہرہ چکنا نظر آنے لگتا ہے۔ تو سونے سے قبل چہرے کو دھونا مت بھولیں تاکہ جلد رات بھر میں تازہ دم اور ہموار ہوجائے۔

جلدی نگہداشت کی مصنوعات کا بہت زیادہ استعمال

میک اپ – فوٹو

اگر تو لاتعداد جلدی مصنوعات استعمال کرتے ہیں اور یہ نہیں جانتے کہ انہیں استعمال کرنے کا درست طریقہ کیا ہے تو یہ جلد کے لیے بہت نقصان دہ ثابت ہوتا ہے۔ ان مصنوعات میں مختلف اجزاءاستعمال کیے جاتے ہیں اور ان کا امتزاج جلد کو خشک اور خارش بڑھا دیتا ہے۔ جب جلد خشک اور خارش کا شکار ہو تو وہ سرخ اور ورم کا شکار ہوجاتی ہے جس کے نتیجے میں باریک جھریاں زیادہ نمایاں ہوجاتی ہیں۔

مناسب مقدار میں پانی نہ پینا

بچہ پانی پی رہا ہے-فوٹو

جسم میں پانی کی مناسب مقدار بہت ضروری ہوتی ہے کیونکہ یہ جلد اور اس کی اندرونی ساخت کے لیے بہت ضروری جز ہے، جب جسم پانی کی کمی کا شکار ہوتا ہے تو جلد ورم اور لٹکنے لگتی ہے، مختصر مدت میں جلد خشک ہوکر جھریوں کو نمودار کردیتی ہے جبکہ آنکھوں کے گرد سیاہ حلقے بن جاتے ہیں۔ وقت گزرنے کے ساتھ پانی کی کمی جلد کی لچک ختم کردیتی ہے جس کے بعد اس سے نجات پانا بھی لگ بھگ ناممکن ہوجاتا ہے۔