چوہدری غلام حسین نے انکشاف کرتے ہوئے کہا کہ حسین نواز اور نوازشریف میں کافی تلخی ہوئی ہے ۔ نوازشریف نے حسین نواز سے کہا کہ تمہاری وجہ سے ہمیں جیل میں جانا پڑا۔ مجھے بھی جیل جانا پڑا۔ مریم کو بھی جیل جانا پڑا۔ہمیں پیسے بھی دینا پڑے، سو پیار اور سو جوتے وہ بھی کھانا پڑے

چوہدری غلام حسین نے عمران خان حکومت سے متعلق کہا کہ وزیراعظم عمران خان کا اسمبلی توڑنے کا کوئی ارادہ نہیں، وہ پانچ سال پورے کریں گے لیکن اگر گورننس کی صورتحال یہی رہی تو کچھ نہیں کہا جاسکتا۔ عمران خان کو کسی سے کوئی خطرہ نہیں خطرہ گورننس اور کارکردگی سے ہے۔

واضح رہے کہ پانامہ لیکس منظرعام پر آنے سے پہلے حسین نواز نے کچھ ایسے بیانات دئیے تھے جو نوازشریف اور مریم نواز کی سزا کا باعث بنے۔۔ یہی نہیں جب احتساب عدالتوں میں ریفرنس دائر ہوئے تو حسین نواز اور حسن نواز نے پاکستان آکر ریفرنس کا سامنا کرنے سے انکار کردیا تھا جس کا نتیجہ یہ نکلا کہ نوازشریف اور مریم نواز کو جیل جانا پڑا اور حسن نواز اور حسین نواز لندن ہونے کی وجہ سے بچ گئے۔