تھا جس کا انتظار۔۔آگیا وہ شاہکار۔۔حالیہ تاریخ کے مقبول ترین ڈرامے میرے پاس تم ہو کی آخری ڈبل قسط نے ہمایوں سعید کے فینز کو دکھی کردیا۔

۔ڈرامے کی آخری قسط میں سب کے پسندیدہ کردار دانش کی موت واقع ہوگئی۔۔۔اپنے پسندیدہ کردار کو دم توڑتے دیکھ کر مداحوں نے سوشل میڈیا پر ایک نئی بحث چھیڑدی ہے۔۔

فینز کا کہنا ہے کہ ڈرامے میں دانش کے بجائے مہوش کو مرنا چاہیے تھا۔کسی نے کہا بے وفائی بھی دانش کے ساتھ ہوئی۔۔اور آخر میں دنیا سے بھی وہ چلاگیا۔۔۔

کسی نے لکھا دانش نے وزیراعظم کے قبر کے بیان کو سیریس لے لیا۔۔۔

ایک چلبلے صارف نے لکھا کہ ڈاکٹرز کی غفلت کے باعث دانش کی جان نہ بچائی جاسکی۔۔

اس سے قبل دو ہزار چودہ میں خلیل الرحمان قمر کے ہی ڈرامے پیارے افضل میں ہیرو کے مرنے پر فینز اسی طرح شاک میں آگئے تھے۔گھرگھر اور آفس آفس،کالجز اور جامعات میں یہ بحث چھڑی ہوئی ہے تھی کہ افضل کو کیوں مارا۔۔افضل مرگیا۔۔۔۔

بھلا افضل کو مارنے کی کیا ضرورت تھی۔۔۔پیارے افضل کو دیکھنے والوں نے اس سے ایسی جذباتی وابستگی قائم کرلی تھی کہ جب آخری قسط میں افضل کو مرتا ہوا دکھایا گیا تو۔۔۔سب چیخ اٹھے تھے

ایک صاحب بھٹو صاحب کا ذکر کرنا نہ بھولے