موسم سرما میں بہت سے لوگ جوڑوں اور ہڈیوں میں درد سے پریشان ہوتے ہیں اور اس سے نجات کے لیے نت نئے طریقے آزماتے ہیں پھر بھی فائدہ نہیں ہوتا، جوڑوں اور ہڈیوں میں درد کی کئی وجوہات سامنے آئی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق کنسلٹنٹ ٹراما آرتھوپیڈک سرجن ڈاکٹر شہاب حیدر شیخ کا کہنا ہے کہ بڑے بوڑھے اکثر پہلے ہی بتادیتے ہیں کہ سردی کی شدت بڑھنے والی ہے جب ان سے پوچھا جاتا ہے کہ آپ کو کیسے معلوم تو وہ کہتے ہیں کہ میرے جوڑوں میں درد شروع ہوگیا ہے۔

ڈاکٹر شہاب حیدر کے مطابق جوڑوں اور ہڈیوں کے درد کو ’پین فور کاسٹ‘ کہا جاتا ہے، جیسے جیسے موسم تبدیل ہوتا ہے تو ایک بیرو میٹر پریشر ہوتا ہے ہوا کا رخ جو تبدیل ہوتا ہے تو آپ کے جسم میں جوائن پریشر بڑھتا ہے تو آپ کی ہڈیوں میں درد بڑھتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سردی میں خون کی گرمائش یا بلڈ فلو کم ہوتا ہے جب ٹھنڈا موسم آتا ہے کہ تو وائٹل آرگنس دل، گردے، دماغ ان میں بلڈ فلو برقرار رکھتی ہے اور ہاتھ، پیر جوائنٹس میں برڈ فلو کم ہوجاتا ہے۔

ڈاکٹر شہاب کا کہنا تھا کہ جوڑوں اور ہڈیوں کے درد ایک اہم وجہ سردیوں میں شہریوں کی جانب سے پانی کا استعمال کردینا ہے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہم یہ نصیحت کرتے ہیں آپ ہلکے وزن سے ورزش کریں اور ڈھیلے کپڑے پہنیں کیونکہ اس سے گرمائش اندر رہے گی اور جسم کا ٹمپریچر نارمل رہے گا۔

آرتھوپیڈک سرجن کا کہنا تھا کہ یوتھ میں اس مسئلے کی بڑی وجہ کے ملٹی پل فیکٹرز ہیں جن میں ڈائٹ کا لینا، ورزش نہ کرنا، لائف اسٹائل وغیرہ شامل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بہت کم لوگ ہیں جو ہفتے میں دو یا تین سے مرتبہ ورزش کرتے ہیں، باڈی میں درد کی وجہ ایک جگہ تین سے چار گھنٹے بیٹھے رہنے کی وجہ سے ہوتا ہے۔

ڈاکٹر شہاب کا کہنا تھا کہ درد سے نجات کے لیے ہلدی کا تیل، سرسوں کا تیل، گینو آئل ہے اس میں کچھ ہربل پراڈکٹس مکس ہوتی ہیں اس کے استعمال سے فائدہ ہورہا ہے تو اس کو استعمال کرنے میں کوئی قباحت نہیں ہے، بہت زیادہ گرم پانی سے نہانے میں کوئی مسئلہ نہیں ہے۔