فواد چوہدری کی معروف قادیانی شخصیت سے اہم ملاقات،کیا باتیں ہوئیں؟ تفصیلات منظر عام پر،

لندن – وفاقی وزیر اطلااعات ونشریات چوہدری فواد حسین سے ایف سی او منسٹر فار ہیومن رائٹس اینڈ یونائیٹڈ نیشن (یو این) لارڈ طارق احمد نے ملاقات کی، وزیر اطلاعات فواد چوہدری اور معروف قادیانی شخصیت طارق احمد کی اس ملاقات کا احوال ربوہ ٹائمز نے اپنی رپورٹ میں بھی لکھا، معروف قادیانی شخصیت طارق احمد نے اپنے ٹوئٹ میں کہا کہ فواد چوہدری سے میڈیا کی آزادی، سکیورٹی اور اقتصادی تعاون کی اہم ترجیحات سمیت وسیع پیمانے پر تخلیقی بحث ہوئی،

معروف قادیانی شخصیت طارق احمد نے وزیر اطلاعات فواد چوہدری سے ملاقات میں مذہبی آزادی اور میڈیا کی آزادی پر بھی تبادلہ خیال کیا۔فواد چوہدری پر قادیانی شخصیت سے ملاقات پر سوشل میڈیا پر شدید تنقید کی جا رہی ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز وفاقی وزیر اطلااعات ونشریات چوہدری فواد حسین سے ایف سی او منسٹر فار ہیومن رائٹس اینڈ یونائیٹڈ نیشن یو این لارڈ طارق احمد نے ملاقات کی ، وزیر اطلاعات نے دونوں ممالک کے مابین منی لانڈرنگ کے خاتمے کے لئے تعاون کی اہمیت پر زور دیا،دونوں اطراف نے باہمی تعاون کی مضبوطی اور فروغ کے لئے مل کر کام کرنے پر اتفاق کیا جبکہ فواد چوہدری نے کہاکہ قانون کی حکمرانی قائم کرنا ہماری حکومت کی اولین ترجیح ہے،انتہاپسندی کے عفریت سے چھٹکارے کے لئے عالمی کاوشیں درکار ہیں ،وزیر اطلاعا ت کی سوشل میڈیا پر تشدد اور نفرت انگیزی پھیلانے کے خلاف بین الاقوامی ریگولیٹری نظام کے قیام کی تجویز کاایف سی او منسٹر نے تجویز کا خیرمقدم کیا اور حکومت برطانیہ کی جانب سے تعاون کی یقین دہانی کرائی۔تفصیلات کے مطابق جمعرات کو وزیر اطلاعات چوہدری فواد حسین سے ایف سی اومنسٹر فار ہیومن رائٹس اینڈ یونائیٹڈ نیشن یو این لارڈ طارق احمد نے ملاقات کی۔وزیر اطلاعات نے لارڈ طارق احمد کو پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کے سماجی اور

معاشی اصلاحاتی ایجنڈے کے متعلق آگاہ کیا۔ لارڈ طارق احمد نے کہا کہ برطانوی وزیراعظم تھریسا مے پاکستان میں ہونے والی مثبت پیشرفت کو سراہتی ہیں۔فواد چوہدری نے کہا کہ قانون کی حکمرانی قائم کرنا ہماری حکومت کی اولین ترجیح ہے،انتہاپسندی ایک عالمی مسئلہ ہے اور اس عفریت سے چھٹکارے کے لئے عالمی کاوشیں درکار ہیں۔دونوں وزرا کے مابین سوشل میڈیا پر نفرت پھیلانے والے مواد کے تدارک کیلئے تعاون پر گفتگو ہوئی ۔

وزیر اطلاعات کی جانب سے سوشل میڈیا پر تشدداورنفرت انگیزی پھیلانے کے خلاف بین الاقوامی ریگولیٹری نظام کے قیام کی تجویز پیش کی گئی ۔ایف سی او منسٹر نے تجویز کا خیرمقدم کیا اور حکومت برطانیہ کی جانب سے تعاون کی یقین دہانی کرائی۔وزیر اطلاعات نے دونوں ممالک کے مابین منی لانڈرنگ کے خاتمے کے لئے تعاون کی اہمیت پر زور دیا۔دونوں اطراف کا باہمی تعاون کی مضبوطی اور فروغ کے لئے مل کر کام کرنے پر اتفاق ہوا۔

Source