اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) ہم سبھی جانتے ہیں کہ مردوں کی ناک خواتین کی نسبت بڑی ہوتی ہے تاہم امریکی سائنسدانوں نے اب اس کی ایسی حیران کن وجہ بھی بتا دی ہے جو کسی کے وہم و گمان میں بھی نہ تھی۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق امریکہ کی یونیورسٹی آف آئیووا کے سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ”مردوں کی ناک اس لیے خواتین سے بڑی ہوتی ہے کیونکہ ان کے جسم کو آکسیجن کی ضرورت خواتین سے زیادہ ہوتی ہے۔ –>

ان کی بڑی ناک سے زیادہ ہوا ان کے جسم میں جاتی ہے اور آکسیجن کی ضرورت پوری کرتی ہے۔“تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ پروفیسر ناتھن ہولٹن کا کہنا تھا کہ ”مردوں کی ناک خواتین کی نسبت اوسطاً10فیصد بڑی ہوتی ہے۔اس کی وجہ جاننے کے لیے ہم نے 20مردوں اور 18خواتین پر تحقیق کی جن کی عمریں 20کی دہائی میں تھیں۔ہم کئی سال تک ان کے عوارض اور چہرے کی ہڈیوں کی نشوونما کی نگرانی اورجسم کی

بڑھوتری کے طریقہ کارکو سمجھنے کی کوشش کرتے رہے۔ہم نے دیکھا کہ اس عمر میں لڑکوں کے مسلز زیادہ بڑھتے ہیں جبکہ خواتین کے جسم پر چربی میں زیادہ اضافہ ہو تا ہے۔ چونکہ مسلز بن رہے ہوں تو جسم کو آکسیجن کی شکل میں زیادہ توانائی کی ضرورت ہوتی ہے لہٰذا ان کی ناک اس ضرورت کے پیش نظر خواتین سے زیادہ بڑی ہوجاتی ہے۔“