متحدہ عرب امارات میں ایک مراکشی عورت نے سنگ دلی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنے مبینہ بے وفا بوائے فرینڈ کو قتل کردیا ، اس کی لاش کی بوٹیاں کرکے انھیں پکایا اور پھر گوشت اور چاول پر مبنی روایتی ڈش مشبوس تیار کرکے اسے پاکستانی تارکِ وطن ورکروں کو کھلا دیا ہے۔

متحدہ عرب امارات میں پراسیکیوٹر اب قتل کے اس گھناؤنے جرم کی تحقیقات کررہے ہیں اور اس مشتبہ عورت کو العین کے علاقے سے گرفتار کر لیا گیا ہے۔ابوظبی سے شائع ہونے والے اخبار دا نیشنل کی ایک رپورٹ کے مطابق اس عورت کا اپنے ہم وطن مراکشی نوجوان سے گذشتہ سات سال سے معاشقہ چلا آرہا تھا۔

لیکن اس نوجوان نے اپنی اس محبوبہ سے شادی سے انکار کردیا تھا اور اس سے کہا تھا کہ وہ اپنی ہم وطن ایک اور مراکشی عورت سے شادی کررہا ہے۔اس پر وہ آگ بگولا ہوگئی اور اس نے اپنے اس بوائے فرینڈ کا کام تمام کرنے کا فیصلہ کر لیا۔

اخبار میں منگل کو شائع شدہ رپورٹ کے مطابق اس عورت نے چُپکے سے تین ماہ قبل اس مراکشی نوجوان کو قتل کردیا تھا اور کسی کو اس واقعے کی کانوں کان خبر نہیں ہوئی تھی۔اس کا چند روز پہلے ہی پتا چلا ہے کیونکہ مقتول کا بھائی اس کی تلاش میں یو اے ای آ گیا تھا ۔

مراکشی میڈیا میں مقتول کے لاپتا ہونے کی اطلاع 13 نومبر کو منظرعام پر آئی تھی اور اس کے بھائی نے میڈیا کو بتایا تھا کہ پولیس کو اس مشتبہ عورت کے بلینڈر سے ایک انسانی دانت ملا تھا۔اس دانت کے ڈی این اے ٹیسٹ سے اس امر کی تصدیق ہوگئی تھی کہ یہ اس کے مقتول بھائی ہی کا تھا۔

اس کے بعد متحدہ عرب امارات میں پولیس نے اس مشتبہ عورت کو گرفتار کر لیا اور اس نے ابتدائی تفتیش کے بعد اپنے جُرم کا اقرار کر لیا ہے۔ یو اے ای پولیس کا کہنا ہے کہ مشتبہ قاتلہ کے خلاف تفتیش مکمل ہونے کے بعد قتل کا مقدمہ چلایا جائے گا۔

Al arabiya