کراچی میں صحافیوں کے اعزاز میں دیئے گئے ظہرانے سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ہمارے سیاسی، مالیاتی اور دفاعی ادارے بین الاقوامی دباؤ میں ہیں، ہمارے اداروں کو دباؤ سے نکلنے کے لیے سوچنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں فیصلے کہاں ہوتے ہیں یہ سب جانتے ہیں لیکن اس کا اظہار سب سے مشکل ہے، سیاستدانوں کو چور ثابت کرنے کی کوشش کی جاری ہے، لگتا ہے 70 سے پہلے کا دور لانے کی کوشش کی جارہی ہے، یہی رویہ رہا تو آںے والی حکومت بھی مشکل میں رہے گی۔

جے یو آئی (ف) کے سربراہ کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ کا تاثر اسلام کے خلاف جنگ کا ہے، ہم اپنے اداروں سے پوچھتے ہیں وہ کس کی جنگ لڑرہے ہیں۔