عمران خان اور افغان سفیر کے درمیان ٹیلیفونک رابطہ

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان اور افغان سفیر ڈاکٹر عمر زاخیلوال کے درمیان ٹیلی فونک رابطہ ہوا ہے جس میں چیئرمین پی ٹی آئی کا افغان صدر کی جانب سے طالبان سے بات چیت کے آغاز کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہنا تھا کہ متحارب فریقین کے مابین بات چیت کے علاوہ کوئی چارہ نہیں۔
دوسری جانب افغان سفیرعمر زاخیلوال نے صدر اشرف غنی کے فیصلے کی تائید پر افغان سفیر کی جانب سے چیئرمین تحریک انصاف کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ افغان حکومت عمران خان کے جذبہ خیر سگالی کوقدرکی نگاہ سے دیکھتی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ قیامِ امن کے حصول کیلئے ہر سطح کی کوشش کی جانی چاہیے،پرامن افغانستان پاکستان کے بہترین مفاد میں ہے۔عمران خان نےافغان سفیر کے ذریعے افغان صدر اشرف غنی کیلئے نیک تمناؤں کا اظہارکیا ۔
خیال رہے یہ رابطہ اس وقت ہوا جب چند روز قبل افغانستان کے صدر اشرف غنی نے افغان طالبان کو سیاسی طاقت تسلیم کرتے ہوئے انھیں دفتر کھولنے کی پیشکش کی تھی جبکہ افغان طالبان نے امریکہ کے ساتھ براہ راست مذاکرات پر رضامندی کا اظہار کیا تھا۔اس کے جواب میں پاکستان نے افغان صدر کا طالبان کو سیاسی طاقت تسلیم کرنے کے اعلان کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان افغان طالبان سے براہ راست یا چار فریقی گروپ کے ذریعے امن مذاکرات میں معاونت کے لیے تیار ہے۔

source