آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں گرفتار پی ٹی آئی کے سینئر رہنما علیم خان کو احتساب عدالت پہنچا دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق آمدن سے زائد اثاثوں کے الزام میں گرفتار پاکستان تحریک انصاف کے رہنما علیم خان کو آج لاہور کی احتساب عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

نیب لاہور نے گزشتہ روز علیم خان کو آمدن سے زائد اثاثوں کی تفتیش کے لیے طلب کیا تھا جہاں انہیں حراست میں لے لیا گیا تھا۔

قومی احتساب بیورو کی جانب سے گرفتاری کے بعد علیم خان نے سینئر صوبائی وزیر بلدیات کی وزارت سے استعفیٰ دے دیا تھا۔

علیم خان کو نیب حوالات منتقل کردیا گیا

پی ٹی آئی رہنما کی گرفتاری کے بعد گزشتہ روز نیب کی جانب سے جاری اعلامیے میں بتایا گیا تھا کہ قومی احتساب بیور نے علیم خان کو مبینہ طور پرآمدن سے زائد اثاثے بنانے کے الزام میں گرفتار کیا۔

نیب اعلامیے کے مطابق علیم خان کی گرفتاری کے بعد قانون کے مطابق انہیں 7 فروری کو ریمانڈ کے لیے احتساب عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

علیم خان سنہ 2011 میں پاکستان تحریک انصاف میں شامل ہوئے تھے ، گزشتہ سات سال سے وہ اس جماعت سے وابستہ ہیں۔ اس سے قبل وہ مشرف دور میں پنجاب حکومت میں آئی ٹی کے صوبائی وزیر کے عہدے پر فائز رہ چکے ہیں، ان کی وزارت کا دورانیہ سنہ 2003 سے 2007 تک محیط ہے۔

یاد رہے کہ پنجاب حکومت کا حصہ بننے سے قبل علیم خان نے دعوی ٰ کیا تھا کہ ان کے خلاف دس اداروں میں تحقیقات ہوئی ہیں، 130 مختلف دستاویزات جمع کروا نے کا بھی دعویٰ کیا تھا۔ایک موقع پر علیم خان نے کہا تھا کہ یا تو انہیں گرفتار کیا جائے یا پھر ان کے خلاف مقدمات ختم کیےجائیں۔