سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے میڈیا کے وزیر نے ان خبروں کی تردید کی ہے جن کے مطابق ولی عہد فٹبال کلب مانچسٹر یونائیٹڈ خریدنے والے تھے۔

اتوار کے روز ٹوئٹر پر پھیلتی ہوئی خبروں کے مطابق محمد بن سلمان نے نامور برطانوی فٹبال ٹیم مانچسٹر یونائیٹڈ خریدنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ برطانوی اخبار دی سن کی رپورٹ کے مطابق محمد بن سلمان، جنھیں ایم بی ایس بھی کہا جاتا ہے، 3.8 ارب پاؤنڈ کی قیمت پر اس کلب کو خریدنا چاہ رہے ہیں۔

تاہم پیر کو ولی عہد کے میڈیا کے وزیر ترکی الشبانۃ نے ایک بیان میں کہا کہ کلب خڑیدنے کے بارے میں خبریں باکل بے بنیاد ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ’مانچسٹر یونائیٹڈ کی سعودی پبلک اِنویسٹمنٹ فنڈ کے ساتھ سپانسرشپ کے امکان کے بارے میں بات ہوئی تھی لیکن کوئی ڈیل نہیں ہو سکی۔‘

تینتیس سالہ شہزادہ محمد بن سلمان جون 2017 میں ولی عہد نامزد ہوئے تھے۔ سعودی عرب کو اپنے انسانی حقوق کے ریکارڈ کی وجہ سے تنقید کاسامنا ہے اور ترکی میں سعودی عرب کے سفارتخانے میں صحافی جمال خاشقجی کی ہلاکت کے بعد اس کا نام خبروں میں آیا۔

صحافی جمال خاشقجی کی ہلاکت کے بعد اکتوبر میں مانچسٹر یونائیٹڈ سعودی عرب میں سرمایہ کاری کے فورم سے الگ ہو گیا تھا۔

بیس دفعہ انگلش پرمیر لیگ جیتنے والی یونائیٹڈ کے مالکان امریکی گلیزر خاندان ہیں جنھوں نے 2005 میں 79 کروڑ پاؤنڈز کے عوض اس کلب کو خریدا تھا۔

اس سے قبل سعودی عرب کے ولی عہد کے اس کلب کو خریدنے کی خبریں آنے کے بعد سوشل میڈیا پر لوگوں نے بڑی تعداد میں اپنی رائے کا اظہار کیا۔

مانچسٹر یونائیٹڈ کے ایک مداح براین نے اپنی ٹویٹ میں کہا تھا کہ ’اگر یونائیٹڈ نے ٹیم سعودی شہزادے کو بیچی تو میں مداحوں کا حصہ نہیں بنوں گا۔ میں کھلاڑیوں سے بھی درخواست کروں گا کہ وہ نہ آئیں کیونکہ وہ ایک ایسی حکومت کی حمایت کریں گے جو کہ اپنی مرضی سے لوگوں کو قتل کرتی ہے۔‘

دوسری جانب ولی عہد کے ایک حامی نے اپنے ٹوئٹر پر لکھا تھا کہ ’جو لوگ کہ رہے ہیں کہ ایم بی ایس نے مانچسٹر یونائیٹڈ خرید کر خواتین کی ٹیم بند کر دینی ہے، وہ بیوقوف ہیں۔ ایم بی ایس نے کامیاب اصلاحات کے ذریعے خواتین ڈرائیورز پر پابندی ختم کی ہے۔ تو وہ خواتین کی ٹیم پر پابندی کیوں لگائیں گے؟ ٹویٹ کرنے سے پہلے اپنی تحقیق پوری کریں۔‘

ایم بی ایس سے متعلق یہ افواہیں گذشتہ سال اکتوبر سے گردش کر رہی تھیں، مگر صحافی جمال خاشقجی کے استنبول کے سعودی سفارت خانے میں قتل کے بعد ولی عہد پر ہونے والی تنقید کے بعد یہ خبریں دم توڑ گئیں۔

شاید اسی وجہ سے ٹوئٹر پر ہونے والی بحث میں مانچسٹر یونائیٹڈ کے شائقین زیادہ خوش نہ نظر آئے۔

بی بی سی اردو