سعودی پولیس نے ایک نوجوان کو عوامی مقامات سے متعلق ضابطہ اخلاق کے بارے میں نامناسب اور بے ہودہ کلمات ادا کرنے پر گرفتار کر لیا ہے۔ سعودی نوجوان کی گرفتاری اس کی بنائی گئی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد عمل میں آئی۔ اُردو نیوز کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ سعودی عرب میں گزشتہ ماہ عوامی مقامات کے حوالے سے ایک ضابطہ اخلاق جاری کیا گیا ہے، جس کے مطابق عوامی مقامات پر مناسب لباس پہننا ہو گا اور نامناسب لباس پہننے پر پولیس کی جانب سے گرفتاری عمل میں لائی جا سکتی ہے۔اس ضابطہ اخلاق کے مطابق عوامی مقامات پر سلیپنگ سوٹ یا نامکمل اور نازیبا لباس پہنے پر پابندی عائد کی گئی تھی اس کے علاوہ دیواروں پر نعرے اور عبارتیں تحریر کرنے سمیت دیگر اخلاقی امور سے متعلق بھی ہدایات جاری کی گئی تھیں اور خبردار کیا گیا تھا کہ اس ضابطے کی خلاف ورزی پر پولیس حرکت میں آئے گی اور سزا اور جرمانے کا بھی اعلان کیا گیا تھا۔

تاہم مذکورہ نوجوان نے اس ضابطہ اخلاق کے بارے میں انتہائی نامناسب زبان استعمال کی اور اس دوران اپنی ویڈیو بھی بناتا رہا،جس میں اس نے بے ہودہ اور طنزیہ الفاظ کا بھی استعمال کیا۔ یہ ویڈیو وائرل ہونے کے بعد پولیس حرکت میں آئی اور ملزم کی سوشل نیٹ ورک کی آئی ڈی ٹریس کر کے اس کی لوکیشن کا پتا چلایا گیا اور پھر اسے گرفتار کر لیا گیا۔ اس سلسلے میں ایک سینیئر پولیس اہلکار نے بتایا کہ ملزم کو گرفتار کرنے کے بعد اس کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جا رہی ہے۔ تحقیقات مکمل ہونے کے بعد اس کا چالان استغاثہ کو دیا جائے گا، جہاں سے ملزم کو قانونی کارروائی کے لیے عدالت میں پیش کیا جائے گا۔