حمزہ علی عباسی نے علی رضا عابدی کے قتل کی ذمہ داری الطاف حسین پر ڈال دی

خدا جانے ،علی رضا عابدی کا قتل الطاف حسین کو چھوڑنے کا بدلہ ہے یا انکو چھوڑنے والوں کے لیے سبق ہے

کراچی – حمزہ علی عباسی نے علی رضا عابدی کے قتل کی ذمہ داری الطاف حسین پر ڈالتے ہوئے کہا ہے کہ خدا جانے ،علی رضا عابدی کا قتل الطاف حسین کو چھوڑنے کا بدلہ ہے یا انکو چھوڑنے والوں کے لیے سبق ہے.تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے ڈیفنس میں متحدہ قومی موومنٹ کے سابق
رکن قومی اسمبلی علی رضا عابدی پر حملہ کیا گیا ہے. علی رضا عابدی پر خیابان اتحاد کے علاقے میں ان کی رہائش گاہ کے باہر حملہ کیا. نامعلوم افراد کی جانب سے علی رضا عابدی پر ان کی رہائش گاہ کے باہر فائرنگ کی گئی جس کے نتیجے میں وہ شدید زخمی ہوگئے. حملے کے وقت علی رضا عابدی اپنی گاڑی میں موجود تھے جب ان پر فائرنگ کی گئی. حملہ آور فائرنگ کرنے کے

بعد فوری فرار ہوگئے. علی رضا عابدی کو زخمی حالت میں فوری جناح ہسپتال منتقل کیا. تاہم علی رضا عابدی کے سر اور گردن میں 4 گولیاں لگیں جس کے باعث وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جان کی بازی ہار گئے.انکی موت کی خبر سن کر پاکستان کے سیاسی حلقوں میں سوگ کی سی کیفیت بن چکی ہے.وزیراعظم عمران خان اور وزیر اعلیٰ سندھ نے ان کے قاتلوں کی گرفتاری کا حکم

دیا جا چکا ہے.دوسری جانب پولیس نے بھی انکے قاتلوں کا سراغ لگانے کے لیے سی سی ٹی وی کیمروں سے شواہد اکٹھے کرنا شروع کر دئیے ہیں اس حوالے حمزہ علی عباسی نے بھی ٹوئیٹ کرتے ہوئے علی رضا عابدی کے قتل کو الطاف حسین مافیا سے جوڑ دیا ہے.

انکا کہنا تھا کہ خدا ہی جانتا ہے کہ علی رضا عابدی کا قتل الطاف حسین کو چھوڑنے کا بدلہ
لیا گیا ہے یا انکو باقیوں کے لیے سبق بنایا گیا.اللہ علی رضا عابدی کی روح کو ابدی سکون میں رکھے.