ڈیرہ غازی خان کے قبائلی علاقوں میں بارڈر ملٹری پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے تیز دھار آلے سے اپنی بیوی کی شرم گاہ کو کاٹنے والے مبینہ ملزم کو گرفتار کرلیا۔

پولیٹیکل اسسٹنٹ برائے قبائلی علاقہ ڈیرہ غازی خان، جمیل احمد کا کہنا تھا کہ متاثرہ خاتون کے والد کی شکایت پر مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ متاثرہ خاتون کو تونسہ شریف کے تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے جہاں ان کا علاج جاری ہے۔

خاتون کے والد نے پولیس کو بتایا کہ وہ اپنے بھائی کے ہمراہ قریبی گاؤں جارہے تھے کہ انہوں نے اپنی بیٹی کے گھر سے چیخ و پکار کی آواز سنی۔

متاثرہ خاتون کے والد کے مطابق انہوں نے آواز سن کر اپنی بیٹی کے گھر کا رخ کیا تاہم گھر میں داخل ہونے پر انہیں پتہ لگا کہ ان کی بیٹی کی چیخنے کی آواز ایک کمرے سے آرہی ہے جو اندر سے بند ہے۔

انہوں نے بتایا کہ دروازہ توڑنے کے بعد انہوں نے اپنے داماد کو ان کی بیٹی کے مخصوص اعضاء کو کاٹتے ہوئے دیکھا جبکہ ان کی بیٹی خون میں لت پت تھی۔

انہوں نے الزام لگایا کہ ملزم کا ایک اور ساتھی بھی جائے وقوع پر موجود تھا۔

متاثرہ لڑکی کے والد خاتون کو فوری طور پر اسے ہسپتال لے کر روانہ ہوئے۔

پولیس کا کہنا تھا کہ خاتون کے ساتھ مبینہ طور پر تشدد کرنے والے ان کے شوہر کو چھاپے کے دوران گرفتار کرلیا گیا ہے۔

فرسٹ انفارمیشن رپورٹ (ایف آئی آر) کے مطابق ملزم کا کہنا تھا کہ اس نے اپنی بیوی سے سونے کے جھمکے مانگے تھے تاہم اس کے انکار کرنے پر اس نے اپنی بیوی پر حملہ کیا۔

خاتون کے اہل خانہ نے پولیس کو بتایا کہ دونوں میاں بیوی میں اکثر جھگڑے رہتے تھے اور مبینہ ملزم نے خاتون کو حمل نہ ٹھہرنے کی وجہ سے تشدد کا نشانہ بنایا۔

ڈیرہ غازی خان کے قبائلی علاقوں میں بارڈر ملٹری پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے تیز دھار آلے سے اپنی بیوی کی شرم گاہ کو کاٹنے والے مبینہ ملزم کو گرفتار کرلیا۔

پولیٹیکل اسسٹنٹ برائے قبائلی علاقہ ڈیرہ غازی خان، جمیل احمد کا کہنا تھا کہ متاثرہ خاتون کے والد کی شکایت پر مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ متاثرہ خاتون کو تونسہ شریف کے تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے جہاں ان کا علاج جاری ہے۔

خاتون کے والد نے پولیس کو بتایا کہ وہ اپنے بھائی کے ہمراہ قریبی گاؤں جارہے تھے کہ انہوں نے اپنی بیٹی کے گھر سے چیخ و پکار کی آواز سنی۔

متاثرہ خاتون کے والد کے مطابق انہوں نے آواز سن کر اپنی بیٹی کے گھر کا رخ کیا تاہم گھر میں داخل ہونے پر انہیں پتہ لگا کہ ان کی بیٹی کی چیخنے کی آواز ایک کمرے سے آرہی ہے جو اندر سے بند ہے۔

انہوں نے بتایا کہ دروازہ توڑنے کے بعد انہوں نے اپنے داماد کو ان کی بیٹی کے مخصوص اعضاء کو کاٹتے ہوئے دیکھا جبکہ ان کی بیٹی خون میں لت پت تھی۔

انہوں نے الزام لگایا کہ ملزم کا ایک اور ساتھی بھی جائے وقوع پر موجود تھا۔

متاثرہ لڑکی کے والد خاتون کو فوری طور پر اسے ہسپتال لے کر روانہ ہوئے۔

پولیس کا کہنا تھا کہ خاتون کے ساتھ مبینہ طور پر تشدد کرنے والے ان کے شوہر کو چھاپے کے دوران گرفتار کرلیا گیا ہے۔

فرسٹ انفارمیشن رپورٹ (ایف آئی آر) کے مطابق ملزم کا کہنا تھا کہ اس نے اپنی بیوی سے سونے کے جھمکے مانگے تھے تاہم اس کے انکار کرنے پر اس نے اپنی بیوی پر حملہ کیا۔

خاتون کے اہل خانہ نے پولیس کو بتایا کہ دونوں میاں بیوی میں اکثر جھگڑے رہتے تھے اور مبینہ ملزم نے خاتون کو حمل نہ ٹھہرنے کی وجہ سے تشدد کا نشانہ بنایا۔

source