پاکستان دشمنی پر بھارت سے ایشین اسنوکر چیمیپن شپ کی میزبانی واپس لے لی گئی

: بھارت کو پاکستانی اسنوکر پلیئرز کو ویزا نہ دینا مہنگا پڑگیا، انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی نے بنگلور میں اسنوکر ایشین ٹور کا تیسرا مرحلہ منسوخ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق ٹین ریڈز ایشین اسنوکر ٹورنامنٹ مارچ کے آخری ہفتے میں بنگلور میں شیڈول تھا لیکن بھارت کی جانب سے چھ پاکستانی اسنوکرز کو ویزے جاری کرنے کی یقین دہانی نہ کرانے پر انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی نے بھارت سے ایشین سنوکر چیمیپن کی میزبانی واپس لے لی۔

اس حوالے سے پاکستان بلئیرڈ اینڈ اسنوکر ایسوسی ایشن کے صدر منور شیخ کا کہنا ہے کہ پاکستانی کھلاڑیوں کے ویزے کی درخواست بروقت دے دی تھی۔

انٹرنیشنل اولمپک کمیٹی نے تین دن پہلے تمام فیڈریشنز کو واضح کیا تھا کہ جب تک بھارتی حکومت ویزے دینے کی تحریری ضمانت نہیں دیتی، اس وقت تک بھارت میں کوئی بھی ایونٹ نہ کروایا جائے اور نہ مستقبل میں میزبانی دی جائے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ مذکورہ ایونٹ میں بابر مسیح، محمد بلال اور حارث طاہر نے پاکستان کی نمائندگی کرنا تھی، اس کے ساتھ قطر میں مقیم احمد شیخ بھی پاکستانی نیشنل ہے جبکہ افغانستان کے جس اسنوکر کھلاڑی نے شرکت کرنا ہے۔

اس کی پیدائش بھی پاکستان میں ہوئی، اس لیے ان کھلاڑیوں کو ویزے ملنا ایک مسئلہ بن گیا تھا جس کے بعد ایشین اسنوکر نے بنگلور میں یہ ایونٹ منسوخ کردیا۔