شہریت کے متنازع قانون پر بھارت نے ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ملائیشین وزیراعظم مہاتیر محمد کی تنقید کو اندرونی معاملات میں مداخلت قرار دے دیا۔

واضح رہے کہ ملائشیا کے وزیراعظم ڈاکٹر مہاتیر محمد نے چار روزہ کوالالمپور کانفرنس کے آخری روز بھارت کے شہریت کے متنازع قانون کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

ملائیشین وزیراعظم نے اپنے خطاب میں کہا تھا کہ بھارت خود کو سیکولر ملک کہتا ہے لیکن وہ مسلمانوں کی شہریت چھیننے کا اقدام کر رہا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایسے متنازع قانون کی بھارت کو کیا ضرورت تھی جس سے بھارت میں ہر طرف افراتفری پھیل رہی ہے اور لوگ مر رہے ہیں۔

ملائیشین وزیراعظم کی تنقید پر نئی دہلی میں ملائیشیا کے سفیرکو طلب کر لیا گیا ہے اور بھارت کی جانب سے مہاتیر محمد کے بیان پر احتجاج کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ملائیشیاحقائق جانے بغیر بھارت کی اندرونی صورتحال پر تبصرے سے باز  رہے۔