Related image

راجستھان، نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک، نیٹ نیوز) سفارتی محاذ میں شکست کے بعد مودی کا لہجہ بدلنے لگا،بھارتی وزیراعظم نے وزیراعظم عمران خان کو دہشت گردی کے خلاف مل کر چلنے کی پیشکش کر دی۔راجستھان میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے مودی نے کہا میں نے عمران خان کووزیراعظم بننے پرمبارکباددی تھی،میں نے کہاتھاکہ ہم بہت لڑچکے ،آئیے اب مل کرغربت اورناخواندگی ختم کرتے ہیں،میری بات پرعمران خان نے کہاتھاپٹھان کابچہ ہوں،اپنی بات پرقائم رہوں گا، وقت آگیا ہے کہ پاکستانی وزیر اعظم اپنے الفاظ کا پاس رکھیں اور غربت اور جہالت کے خلاف جنگ میں ہمارا ساتھ دیں، اب دیکھتے ہیں عمران خان اپنی بات پرقائم رہتے ہیں یانہیں۔ بھارتی وزیراعظم نے کہا ہماری جنگ دہشت گردی اور انسانیت دشمنوں کے خلاف ہے ۔ ہندوستان ٹائمز کے مطابق نریندرمودی نے کشمیریوں کوحراساں کئے جانے کی بھی مذمت کرتے ہوئے کہاکہ ہماری لڑائی کشمیرکیلئے ہے ،کشمیریوں سے نہیں،گزشتہ چنددنوں میں کشمیری طلبہ کیساتھ جوکچھ ہواایسانہیں ہوناچاہیئے تھا، مودی نے کہا بھارت میں کسی بھی جگہ کشمیریوں کو نشانہ نہیں بنایا جائے ۔ کشمیری خوددہشت گردی کا شکار ہیں اوراور دہشت گردی کیخلاف جنگ میں کشمیرکا بچہ بچہ بھارت کے ساتھ کھڑا ہے ۔ ہر بھارتی کی کہ ذمہ داری ہے کہ وہ ہر کشمیری کی حفاظت کرے ۔ پلوامہ حملے کے حوالے سے مودی نے کہا انتہاپسندوں کیخلاف کاررائیاں کر رہے ہیں اور ایسے لوگوں کے خلاف مزید سخت ایکشن لیا جائے گا، ہم خاموش نہیں رہ سکتے ،ہم جانتے ہیں دہشت گردی کو کیسے کچلنا ہے ۔ مودی نے اپنے خطاب میں روایتی ہٹ دھرمی کا مظاہرہ بھی کیا اور کہا پلوامہ حملے کے بعد ہم نے پاکستان کیخلاف کافی اقدامات کئے ہیں اور ہمارے اقدامات کی وجہ سے پاکستان کے اندرفکر مندی کی کیفیت ہے ۔ علاوہ ازیں مقبوضہ کشمیر کے سابق کٹھ پتلی وزیراعلیٰ اور نیشنل کانفرنس کے رہنما عمر عبداﷲ نے مودی کے بیان کا خیر مقدم کرتے ہوئے اپنے ٹویٹ میں کہا آج آپ نے ہمارے دل کی بات کہہ دی۔ دریں اثنا پاکستان کی کامیاب سفارتکاری نے بھارت کو اپنا رویہ تبدیل کرنے پر مجبور کر دیا،بھارت میں تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی رمیش کمار کا کنبھ کے میلے میں شاندار استقبال کیا گیا،رمیش کمار کی بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی اور بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج سے ون آن ون ملاقات ہوئی ،رمیش کمار نے بتایا بھارتی وزیرخارجہ سشما سوراج سے 20 منٹ ملاقات ہوئی جب کہ نریندر مودی سے بھی ملاقات ہوئی۔پی ٹی آئی رہنما نے بھارت پر واضح کیا پاکستان امن چاہتا ہے اور امن کے ذریعے سے ہی مذاکرات آگے بڑھانا چاہتے ہیں۔